اگر ھم کہیں اور وہ مسکرا دیں
ھم انکے لئے زندگانی لٹا دیں

ہر اک موڑ پر ہم غموں کو سزا دیں
چلو زندگی کو محبت بنا دیں

اگر خود کو بھولے تو کچھ بھی نہ بھولے
کہ چاہت میں انکی خدا کو بھلا دیں

کبھی غم کی آندھی جنھیں چھو نہ پائے
وفاوں کی ہم وہ نشیمن بنا دیں

قیامت کے دیوانے کہتے ہیں ہم سے
چلو ان کے چہرے سے پردہ ہٹا دیں

سزا دیں، صلہ دیں، بنا دیں، مٹا دیں
مگر وہ کوئی فیصلہ تو سنا دیں

Loading more stuff…

Hmm…it looks like things are taking a while to load. Try again?

Loading videos…